خبریں

سرحد چیمبر کا پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام کا خیر مقدم

23 May 2021

23مئی 2021ء
سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے حکومت کی جانب سے پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام اور اس حوالے سے بزنس کمیونٹی اور متعلقہ سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت کرنے کا خیر مقدم کیا ہے اور کہا کہ ایسے حکومتی اقدامات سے نہ صرف غیر قانونی تجارت کے خاتمہ سمیت ایکسپورٹرز ٗ امپورٹرز کو افغانستان سمیت علاقائی تجارت کی راہ میں درپیش مسائل کو فوری حل کرنے میں معاون ثابت ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر انجینئر منظور الٰہی نے کسٹمز ہاؤس پشاور میں پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام کے بارے میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے۔ اجلاس میں سرحد چیمبر کے سابق صدر فیض محمد فیضی ٗ سابق سینئر نائب صدر اور فرنٹیئر کسٹمز ایجنٹس گروپ کے صدر ضیاء الحق سرحدی ٗ پاک افغان جائنٹ چیمبر کے سینئر نائب صدر اور سرحد چیمبر کی ایگزیکٹو کمیٹی کے رکن خالد شہزاد ٗ ایکسپورٹرز ٗ سرحد چیمبر کی لینڈ روٹ سٹینڈنگ کمیٹی کے چیئرمین امتیاز احمد علی ٗامپورٹرز سمیت کلکٹر کسٹمزآپریزمنٹ محمد سلیم ٗ کلکٹر کسٹمز پریونٹیوکامران ملک ٗ ایڈیشنل کلکٹر طورخم عدنان اقبال سواتی ٗ ڈی سی ہیڈ کوارٹر شہزاد ٗ ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے سینئر نمائندے مسٹر پیٹر ٗ ٹیم لیڈر محمد ناظم سلیم ٗ ڈپٹی ٹیم لیڈر سید حبیب اللہ ٗ اینٹی نارکاٹکس فورس ٗ FIA ٗ کسٹمز اور بارڈر ز مینجمنٹ کے متعلقہ سینئر افسران بھی موجود تھے۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ حکومت ایشین ڈویلپمنٹ بنک کے تعاون سے پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کا قیام عمل میں لا رہی ہے جس کا بنیادی مقصد پاکستانی باڈرز کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا ہے جو کہ نہ صرف ایکسپورٹ اور امپورٹ کے مال کو بروقت و برق رفتار انداز میں ترسیل کو یقینی بنایا جائے گا بلکہ بزنس کمیونٹی کو سہولیات فراہم کی جائے گی۔ ا جلاس کے شرکاء نے کہا کہ پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام سے معاشی خوشحالی ٗ سرمایہ کاری کو فروغ ٗ برآمدات میں اضافہ ٗ علاقائی تجارت بڑھانے ٗ مقابلہ کی فضاء پیدا ہونے ٗ تجارت کے اخراجات میں کمی ٗ تجارت میں سہولیات ٗ بہتر بزنس کی فضاء اور جدید طرز کی تجارت کو متعارف کروانے میں یہ اقدام سنگ میل ثابت ہوگا۔بعد ازاں اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سرحد چیمبر کے سینئر نائب صدر انجینئر منظور الٰہی نے حکومت کی جانب سے پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی کے قیام کا خیر مقدم کیا اور افغانستان کے ساتھ تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ بالخصوص علاقائی تجارت کو بڑھانے کے لئے عملی اقدامات اٹھانے پر زور دیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ علاقائی تجارت بڑھنے سے ایکسپورٹ میں اضافہ ہوگا اور ملکی معیشت بھی مستحکم ہوگی۔انہوں نے کہاکہ پاکستان لینڈ پورٹ اتھارٹی ون ونڈو آپریشن کی ایک عمدہ مثال ہوگی جس سے بزنس کمیونٹی کو سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے میں مدد گار ثابت ہوگا۔ انہوں نے اجلاس کو بتایا کہ سرحد چیمبر نے حکومت کوعلاقائی تجارت کوبڑھانے کے لئے اپنی مختلف سفارشات اور تجاویز پیش کیں اگر اس پر من و عن عمل درآمد کیا جاتا ہے تو افغانستان کے راستہ سنٹرل ایشین ریپبلک ممالک کو تجارت ٗ ایکسپورٹ کو کافی حد تک بڑھایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا ہے حکومت علاقائی ممالک کے ساتھ تجارت بڑھانے کے لئے فری ٹریڈ ایگریمنٹ (FTA) پر دستخط کریں اور علاقائی ممالک کی بزنس کمیونٹی کو ایک دوسرے کے قریب لانے اور تجربات سے استفادہ حاصل کرنے کے لئے اقدامات اٹھائے جائیں۔ 

 

NEWS